خبر
9/5/2019
 شام کے ویٹنری ڈاکٹروں اور سنڈیکیٹ کے ممبران کا رضوی ڈیری فارم اورمویشیوں کی نگہداشت کے مراکز کا دورہ

 
شام کے ویٹنری ڈاکٹروں اور سنڈیکیٹ کے ممبران کا رضوی ڈیری فارم اورمویشیوں کی نگہداشت کے مراکز کا دورہ

شام کے ویٹنری ڈاکٹروں اورسنڈیکیٹ کے سربراہ اورممبران نے آستان قدس رضوی سے وابستہ ڈیری فارم اور مویشیوں کی نگہداشت کے مراکز کا دورہ کیا جہاں بڑی تعداد میں دودھ دینے والی گائےاور بکریوں کی نگہداشت کی جاتی ہے 

  آستان نیوز کی رپورٹ  کے مطابق، شام کے ویٹنری ڈاکٹروں اورمویشی پروری کے شعبے سے تعلق رکھنے والے ماہرین کے وفد کے سربراہ حسین نبی زادہ  نے اس موقع پر ہمارے نمائندے سے  گفتگو کرتے ہوئے  کہا کہ یہ وفد 14 افراد پر مشتمل ہے جو شام کے مختلف صوبوں سے تعلق رکھتے ہيں۔ انہوں نے کہا کہ یہ سبھی افراد شام کے مویشیوں کے معالجین کی انجمن یا ویٹنری سنڈيکیٹ کے ممبر ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ وفد کے ارکان نے  آستان قدس رضوی جیسے عظیم کمپلیکس  کی توانائیوں اور صلاحتیوں سے آشنائی حاصل کی ان کا کہنا تھا کہ ایران نے مجموعی طور پر مویشیوں کی پرورش کے سلسلے میں جو تجربے حاصل کئے ہیں ہم لوگوں نے ان کا بھی قریب سے مشاہدہ کیا۔

 شام کے ویٹنری ڈاکٹروں اور سنڈیکیٹ کے ارکان کے وفد کے سربراہ نے یہ بھی کہا کہ اس دورے میں اس وفد نے یہ خواہش ظاہر کی ہے کہ تمام شرائط پر اتفاق رائے کے بعد ایک مفاہمتی نوٹ پر دونوں ممالک دستخط کریں جس کے تحت  شام میں مویشیوں کی پرورش اور اس شعبے سے متعلق دواؤں وغیرہ کی فراہمی کے سلسلے میں دونوں ملک ایک دوسرے سے تعاون کریں تاکہ ڈیری کی صنعت میں شام کی ضروریات پوری ہوسکیں ۔

شامی وفد کے سربراہ نبی زادہ نے یہ بھی کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور جمہوریۂ شام کے مابین جن باتوں پر اتفاق  ہوا ہے ان کے تحت شام کے ماہرین، ایران کے مختلف صنعتی ، زرعی اور سائنسی مراکز کا دورہ کریں گے تاکہ ایران کی سائنسی ترقی اور دیگر شعبوں میں اس کی پیشرفت اور ایجادات کا قریب سے مشاہدہ  کرسکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آستان قدس کے اقتصادی کمپلیکس کی اعلی صلاحیتوں اور تجربات کے پیش نظر ہم امید کرتے ہيں کہ دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی تعاون کا سمجھوتہ ہوجائے گا

  آستان قدس رضوی کے صنعتی ڈیری فارم کے یونٹ نمبر دو کے سربراہ مصطفی پشتوان  نے بھی اس وفد کے دورے کے موقع پر اپنے کمپلیکس کی جانب سے اعلان کیا کہ مویشیوں کی پرورش کے شعبے  میں ہم شام کے ساتھ  ہر قسم کے تعاون کے لئے تیار ہیں۔

انھوں نے یہ بھی  کہا کہ  شام کے مویشیوں کے ڈاکٹروں کے سوالات زیادہ تر ٹیکوں یا ویکسینیشن، معالجے، اسپرم اور مستعمل دواؤں وغیرہ کے بارے میں تھے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ان کے کمپلیکس میں مویشیوں کی نگہداشت اور پرورش کے لئے سات مراکز قائم گئے ہيں  جن میں سے تین عدد ایسے ہیں جنھیں نمونے کے طور پر پیش کیا جاتا ہے۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ مشہد کے علاوہ، صوبۂ خراسان کے دیگر شہروں میں ایسے چار مراکز قائم کئے گئے ہیں جہاں مویشیوں کی پرورش اور نگہداشت کی جاتی ہے  

 
وزٹرز کی تعداد:23
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...