خبر
6/29/2019
حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام سے متعلق 700 گرانقدر کتابیں آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری میں محفوظ ہیں

 
حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام سے متعلق 700 گرانقدر کتابیں آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری میں محفوظ ہیں

آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری کے خطی نسخوں کے شعبے  کے انچارج نے کہاہے کہ حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام سے منسوب اور متعلق 700سے زیادہ خطی  اور  لیھتوں گرافی کے کمیاب و نفیس  نسخے اور کتابیں  آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری میں محفوظ ہیں کہ جن میں سے بعض نسخے ساتویں صدی  کے زمانے کے ہیں ۔

آستان نیوز کی رپورٹ کےمطابق، آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری کے خطی نسخوں کے شعبے  کے انچارج سید محمد رضا فاضل ہاشمی نے    مرکزی لائبریری کے گنجینہ  میں موجود بعض قیمتی اور نایاب کتابوں  کی طرف اشارہ کیا اور کہا: "احتحاج" حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام کے مناظرات ، "توحید مفضل" حضرت کے بعض دروس کہ جو حضرت کے شاگرد مفضل بن عمر جعفی کے قلم سے تحریر ہوئے ، "اصول کافی" موضوع امامت، آئمہ کے صفات،اور دلائل امامت وغیرہ ایسے ایسے گرانقدر  اور قیمتی نسخے اور کتابیں  ہیں کہ جو یہاں محفوظ ہیں۔
انہوں نے حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام کے روزانہ کے درس کے بعد ملحدین  او ر منکرین خدا سے مناظروں  کا ذکرکرتے ہوئے کہا کہ یہ مطالب مفضل بن عمر جعفی کے ذریعہ کتاب" توحید مفضل" کی چار مجالس میں تحریر ہوئے ہیں۔

آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری کے خطی نسخوں کے ادارے کے سربراہ نے کہا:بعض اہل قلم اس کتاب کو "کتاب الاہلیلجہ"کے نام سے یاد کرتے ہیں اور اس کتاب  کے  113 سے زیادہ  خطی و مطبوعہ نسخےکہ جن کے  ترجمے    زیادہ تر گیارہوں اور بارہویں صدی ہجری میں  انجام پائے  ہیں آستان قدس رضوی کی لائبریری میں موجود ہیں۔

فاضل ہاشمی نے حضرت امام  جعفر صادق علیہ السلام کے مناظرات کی طرف  کہ جو احمد بن علی طبرسی کے ذریعہ تالیف و جمع آوری ہوئے ہیں   اشارہ کیا اورکہا: اس کتاب کے 135  سے زیادہ خطی اور لیتھو گرافی  کے نسخے    آستان قدس رضوی کی لائبریری کے خطی نسخوں کے گنجینہ میں موجود ہیں۔

انہوں نے مزید کہا: شیخ کلینی کی تالیف "اصول کافی " کہ جو شیعہ مذہب کے اصلی منابع میں سے ہے اس کے تقریبا 90 نسخے موجود ہیں کہ جن   میں زیادہ تر احادیث حضرت امام جعفرصادق علیہ السلام سے مروی ہیں ، کہ اس کے بھی اکثر نسخے گیارہوں اور بارہویں صدی ہجری سے مربوط ہیں۔

آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری کے خطی نسخوں کے ادارے کے سربراہ نے کہا نے اسی طرح   مصباح الشریعہ ومفتاح الحقیقہ"  کے 85 خطی  اور  لیتھو گرافی کے  نسخے " کہ جن   کی دسویں صدی ہجری میں کتابت ہوئی ہے اور علی بن عیسی اربلی کی  کتاب "کشف الغمہ فی معرفۃ الآئمہ"  کے 14 خطی  اور غیر خطی  نسخے کہ جو آئمہ معصومین علیھم  السلام کے معجزات و فضائل اور سیرت کے بارے میں ہے ، ان نفیس نسخوں میں شامل ہے۔
فاضل ہاشمی نے " اختیارات الایام" نامی کتاب کو محمد باقر مجلسی کی تالیفات میں شمار کیا کہ جو چند چھوٹے بڑے رسالوں کا مجموعہ ہے اور اس میں  ایام کا سعد و نحس ہونا اور کچھ جغرافیائی  ونجومی مسائل کا ذکر ہے  انہوں نے کہا: مولف نے اختیارات الایام سے مربوط ابواب میں کہ کتاب کے اکثر مطالب اسی سلسلے میں ہیں، رضی الدین ابن طاؤس کی سند سے حضرت امام جعفر صادق علیہ السلا م کی روایات کے تحت مطالب بیان کیے ہیں  اور کچھ مطالب علوم خفیہ کے بارے میں ہیں  کہ اس کے ایک سو  خطی  اور لیتھو گرافی   کے  نسخے  اس لائبریری میں موجود ہیں۔

انہوں نے  حضرت امام جعفرصادق علیہ السلام سےمروی روایت  دعائے ہفت حصارکے نسخوں کے بارے میں اور حضرت امام جعفرصادق علیہ السلام سے منقول  "قصص الانبیاء" کے  85 خطی  ومطبوعہ نسخے    کے بارے میں بھی  جو محمد تبریزی کے قلم سے تحریر ہوئے ہیں  کہا کہ یہ ساری کتابیں حضرت امام جعفرصادق سے منسوب ہیں    ۔

آستان قدس رضوی کی مرکزی لائبریری کے خطی نسخوں کے ادارے کے سربراہ نے   اسی طرح حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام سےمنسوب دوسری کتابوں   جیسے    "کتاب الوصیہ" ، فالنامہ حضرت امام جعفرصادق" ، " کتاب الیوم واللیلہ"، "کتاب علل الشرائع" اور "بحارالعلوم" وغیرہ کی طرف اشارہ  کیا  جن میں حصرت امام جعفر صادق علیہ السلام کی روایت و احادث مذکور ہیں اور کہا کہ یہ ساری کتابیں اور  ان کے متعدد نسخے آستان قدس رضوی کی لائبریری میں موجود اور محفوظ ہیں ۔  
وزٹرز کی تعداد:59
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...