خبر
5/19/2019
روس  کے لئے فود پروڈکٹس کی برآمدات کا مقصد ایران کی پروڈکشن کو ترقی دینا ہے ، پیمان پک

 
روس کے لئے فود پروڈکٹس کی برآمدات کا مقصد ایران کی پروڈکشن کو ترقی دینا ہے ، پیمان پک

آستان قدس رضوی کی سپلائی چین مینیجمنٹ کمپنی کے سربراہ نے کہا ہے کہ امام رضا (ع) کے روضے سے متعلق مختلف کمپنیوں اور کاخانوں کی تیار کردہ اشیا کو روس کے پانچ بڑے شاپنگ مال اور تجارتی مراکز کو برآمد کیا جارہا ہے  
رضوی ایس سی ایم  کمپنی کے سربراہ علی رضا پیمان پاک نےکہا کہ اس سال کے دوران رضوی سپلائی چین مینجمنٹ کمپنی کے ذریعے ایرانی برانڈ کی پانچ قسم کی اشیا و مصنوعات روس کے"آشان" اور "میگنٹ"  نامی جیسے بڑے شاپنگ مالز کو سپلائي کی جارہی ہیں
 
"علی رضا پیمان پاک" نے آستان نیوز  سے گفتگو کرتے ہوئے کہا : روس میں زیادہ تر سامان چین اسٹورز کے ذریعے فروخت ہوتا ہے۔ ان چین اسٹورز کی مالی آمدنی ایران کی پٹرولیم کمپنی کی آمدنی سے دو تین گنا زیادہ ہے۔ ان میں سے بعض چین اسٹورز کی پورے روس میں دس ہزار سے سولہ ہزار شاخیں ہیں اور ان میں فروخت ہونے والا سامان کیفیت کے لحاظ سے اعلی سطح کا اور ایک خاص اسٹینڈرڈ کے مطابق ہونا ضروری ہے اور اس کی گارنٹی بھی ضرور ہونی چاہئے وغیرہ وغیرہ ۔ 

اسی موضوع پر مزید گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اسی لئے روسی کمپنی سے طے شدہ معاہدے کے تحت وہ  اشیا جو وہاں فروخت کے لئے پیش کی جانی ہیں، رضوی سپلائی چین مینجمنٹ کمپنی انھیں وہاں برآمد کرچکی ہے اور وہ وہاں فروخت بھی ہورہی ہیں ۔ 

رضوی سپلائی چین مینجمنٹ کمپنی کے سربراہ نے بتایا کہ پہلے مرحلے میں ہمارے مدّ نظر یہ بات ہے کہ آستان قدس رضوی کے برانڈ کی اشیا برآمد کی  جائیں، پھر بعد کے مراحل میں دوسری ایرانی کمپنیوں کے برانڈ کی مصنوعات بھی روس کو برآمد کی جائیں گی ۔ ان کا کہنا تھا کہ معاہدے میں یہ بھی طے پایا ہے کہ دو ہزار ٹن غذائی اشیا اس سال کے دوران بھیجی جائیں گی۔ ان میں ٹین کے ڈبوں میں پیک غذائی اشیا جیسے ٹماٹر کا پیسٹ، جام ، جیلی ، میکرونی شامل ہيں اور پھلوں کے رس کے ساٹھ لاکھ  پیکس بھی وہاں کی سپر مارکٹس کے لئے سپلائی کی جائیں گی۔ 

"پیمان پاک" نے مزید کہا : اپریل 2019 کی ابتدا سے اب تک 250 ثن جام، جیلی، ٹین کے ڈبوں میں پیک پھل اور پھلوں کے جوس "آستارا" شہر کی سرحد سے روس کے لئے سپلائی کئے جاچکےہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارے ادارے کا ہدف یہ ہے کہ اس طرح زیادہ سے زیادہ غیر ملکی زرمبادلہ ملک میں آئے اور ساتھ ہی ساتھ غذائی اشیا کے پیداواری یونٹس کو فروغ ملے اور برآمدات میں اضافہ ہو۔ اس سلسلے میں انھوں نے بتایا: تمام رضوی برانڈز اور دیگر برانڈز کے آرڈر لے کر انھیں روس کو برآمد کرنا اس کمپنی کے اہداف میں شامل ہے۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ ماضی میں یہ کام واسطوں کے ذریعے انجام پاتا تھا ۔ مثال کے طور پر آذربائیجانی اور تاجکستانی تاجر یا مختلف کمپنیاں ہمارے ملک اور روسی واسطوں کے مابین کام کرتی تھیں اور ان کے ذریعے ٹماٹرکا پیسٹ اور پھلوں کا جوس وغیرہ نامنظم طریقے سے ہمارے کارخانوں سے خرید کر روس کو برآمد کیا جاتا تھا۔ لیکن اب ہم اسے باقاعدگی کے ساتھ اپنے اس سپلائی چین مینجمنٹ کمپنی کے ذریعے انجام دیں گے ۔ پیمان پاک نے یہ بھی کہا کہ ان برآمدات کے علاوہ ہمارا ارادہ ہے کہ رضوی کمپنیوں اور دوسری ایرانی کمپنیوں کی تیار کی ہوئی اشیا کو دوسرے مرحلے میں ہندوستان ، عراق اور عمان وغیرہ کو برآمد کريں۔  انھوں نے کہا کہ ہمارا یہ ادارہ اس بات کی کوشش کررہا ہے کہ ہمارے اس ملک میں بننے والی اشیا  کے لئے برآمدات کا ایک آسان راستہ کھل جائے تاکہ یہاں کے صنعتکاروں کی حوصلہ افزائی ہوسکے اور ملک کی پیداوار کو بڑھانے میں دن دوگنی رات چوگنی ترقی ہو۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک مرتبہ برآمدات کا یہ سلسلہ آسانی کے ساتھ  اور تیزرفتاری سے  شروع ہوگیا تو پھر ملک میں زرمبادلہ بھی زیادہ آسانی کے ساتھ آنے لگے گا۔ 

رضوی سپلائی چین مینجمنٹ کمپنی کے سربراہ نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہمارے اس اقدام سے یہ بھی آسانی ہوگئی ہے کہ ملک کی کسی بھی کمپنی کو اپنی پیداوار کو برآمد کرنے کے لئے اپنا وقت اور توانائی خرچ کرنے کی ضرورت نہیں رہ جائے گی اور ہمارے ذریعے ان کے لئے ایک سیدھا اور آسان راستہ کھل جائے گا۔ 

پیمان پاک نے رضوی اکنامک آرگنائزیشن کی مصنوعات کی برآمداتی منڈیوں کا دائرہ وسیع کرنے کے تعلق سے اپنی کمپنی کے پروگراموں کے بارے مین  کہا کہ : آستان  قدس رضوی کے حکام  سے ہمیں اجازت مل گئی ہے کہ ایک کمپنی روس میں "آگنی رضوی" (نور رضوی) کے نام سے قائم کی جائے تاکہ برآمدات اور تجارتی لین دین   آسانی سے انجام پا سکے ۔ 
 
  
   
وزٹرز کی تعداد:42
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...