خبر
5/17/2019
اخراجات میں کمی   کرکے   غربت کا خاتمہ  اور روزگار کے مواقع کی فراہمی      آستان قدس رضوی کی ترجیحات ہیں؛ متولی آستان قدس

 
اخراجات میں کمی کرکے غربت کا خاتمہ اور روزگار کے مواقع کی فراہمی آستان قدس رضوی کی ترجیحات ہیں؛ متولی آستان قدس

 صوبہ خراسان رضوی کے صوبائی عہدیداروں  کی مشاورتی کونسل کا  نئۓ   ہجری شمسی سال میں پہلا اجلاس    حرم مطہر رضوی کی میزبانی میں منعقد کیا گیا جس میں صوبہ خراسان رضوی میں ولی فقیہ کے نمائندے،صوبہ خراسان رضوی کے گورنر اور دیگر صوبائی عہدیداروں نے شرکت  کی

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق  اس اجلاس میں آستان قدس رضوی کے متولی حجت الاسلام والمسلمین احمد مروی  نے  اپنے خطاب میں  کہا کہ ایسے اقدامات کا انجام دینا  نہایت ضروری ہے جن سے زائرین زیارت کے پورے سفر میں  اطمینان اور سکون سے  رہیں اور اس مقصد کے حصول کے لئے بلدیہ کو مناسب  وسائل  اور سہولیات فراہم کرنا ہوں گی۔

 حجت الاسلام مروی نے  کہا کہ حرم مطہر رضوی میں شبہائے  قدر کے دوران  پروگرام  کا  اہتمام   کروانے والے تمام  اداروں  کو میرا مشورہ ہے کہ وہ   اپنے    تمام  ماتحت     اداروں کی    کارکر دگی کو بہتر بنانے  اور ممکنہ خامیوں کو دور کرنے کے لئے  نئے سرے سے  جائزہ لیں ۔

انہوں نے کہا  کہ حرم رضوی میں شب ہائے  قدر کے پروگراموں کو بہتر انداز میں منعقد کرنے کے لئےحرم مطہر کے تمام ادارے آمادہ رہیں،موسم کی خرابی اوربارش کے پیش نظر زائرین  کو   ایسی  جگہیں فراہم کرنے کے لئے بھی تیار رہیں جہاں چھت ہو یا   پھر ان کے لئے سائبان کا انتظام ہو

حجت الاسلام مروی نے  اپنے خطاب میں    آستان قدس رضوی کی سرگرمیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم  روزگار کے مواقع کی  فراہمی  کے  لئے سنجیدگی سے اقدامات انجام دے رہے ہیں اور آستان قدس رضوی کے تمام اداروں  کے اخراجات میں کمی    اور اسراف  و فضول خرچی سے  اجتناب کو    یقینی بنائيں گے
ان کا کہنا تھا کہ اخراجات میں کمی سے   حاصل ہونے والی بچت کو آستان قدس رضوی کے مختلف  امور   اور  اسی  طرح معاشرے میں غربت کے خاتمہ اور روزگار کے  مواقع فراہم کرنے لئے استعمال  میں لایا جائے گا۔

اجلاس کے دوران صوبہ خراسان رضوی میں ولی فقیہ کے نمائندے اور مشہد مقدس کے امام جمعہ آیت اللہ سید احمد علم الھدیٰ نے شب ہائے قدر یا ماہ مبارک کی  تین مخصوص شبوں  کے حوالے سے  اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ چند برسوں سے ان راتوں میں جو اچھا اقدام انجام دیا جا رہا ہے وہ یہ ہے کہ حرم مطہر رضوی کے تمام دروازے ان راتوں میں کھلے رہتے ہیں  اور یہ چیز ضروری ہے تاکہ زائرین و مومنین  کو کوئی پریشانی نہ  ہو ۔

اجلاس میں  خطاب کرتے ہو ئے  حرم مطہر رضوی کے کوآرڈینیشن  ادارے کے سربراہ       محمد حسن حبیبیان نے  بھی  کہا  کہ شب ہائے  قدر کے  پروگراموں میں لاکھوں کی تعداد میں مومنین  شرکت کرتے ہیں ان پروگراموں کے دو اہم حصوں کے لئے یعنی پروگرام شروع ہونے سے پہلے اور خود پروگرام کے دوران   نہایت غور وفکر کے ساتھ پلاننگ  کرنے کی ضرورت ہے۔

 انہوں نے کہا کہ شب  ہائے قدر کے دعا و مناجات کے پروگرام  رات  ۹ بجے سے دعائے  جوشن کبیر کی تلاوت  کے  ساتھ شروع ہو جائیں گے اور رات ایک بجے تک جاری رہیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ پہلی شب قدر یعنی  شب  انیس ماہ مبارک رمضان  میں   آیت علم الھدیٰ اور دوسری شب قدر یعنی شب اکیس  میں آیت اللہ رئیسی اور تیسری شب قدر یعنی شب تیئیس رمضان المبارک   میں آیت اللہ سید احمد خاتمی خطاب فرمائیں گے۔

حرم مطہر رضوی کے  کوآرڈینشن ادارے کے سربراہ   نے بتایا کہ ان تین راتوں میں غیر ایرانی زائرین کے پروگرام  حرم  مطہر رضوی کے دارالمرحمہ ہال میں منعقد کئے جائیں گے۔

 ان کا کہنا تھا کہ   روز مرّہ خدمت کرنے والے خادموں کے علاوہ مزید ۳۰ ہزار خدام  کو ان تین راتوں میں  زائرین کی خدمت کے لئے  طلب کرلیا گيا ہے  ، اس کے علاوہ ان تین راتوں میں ہر رات  نماز مغربین کے موقع پر  ہلکی افطاری کے  ایک  لاکھ  پیکیٹس  بھی   روزے داروں میں تقسیم کئے جائیں گے۔

 محمد حسن  حبیبیان کا کہنا تھا کہ شب ہائے  قدر میں حرم مطہر رضوی کے  چار لاکھ مربع میٹر فرش  پر قالین  بچھائے جائیں گے اس کے علاوہ مولائے متقیان حضرت علی  علیہ السلام کے شہادت کے ایام میں  حرم مطہر رضوی کے چھ ہزار مربع میٹر  حصوں اور دیواروں کو  سیاہ پارچوں سے سیاہ پوش کیا جائے گا      
وزٹرز کی تعداد:38
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...