خبر
1/4/2018
دشمن کو عوام کی روٹی اور انتخابات سے کوئی سروکار نہیں ، بلکہ اختلاف اور افراتفری پھیلانا چاہتا ہے

آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے کہا؛  
دشمن کو عوام کی روٹی اور انتخابات سے کوئی سروکار نہیں ، بلکہ اختلاف اور افراتفری پھیلانا چاہتا ہے

آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے بتایا: دشمن ہر لمحہ غلط فائدہ اٹھانے کی تلاش میں رہتا ہے؛ ایک دن ووٹنگ اور انتخابات کا بہانہ بنا کر کہتا ہے کہ عوام کے ووٹوں کا کیا بنا، اور دوسرے  دن عوام کی روٹی کا بہانہ بنا لیتاہے؛ لیکن درحقیقت دشمن کا مقصد ہرگز لوگوں کے ووٹ اور معیشت نہیں ہے، بلکہ ایران پر قبضہ کرنے کی کوشش میں ہے اور یقیناً وہ اپنی اس خواھش کو قبر میں لے جائے گا۔
آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛ حجت الاسلام والمسلمین سید ابراہیم رئیسی نے ’’اتحاد ملت، بیعت با ولایت‘‘ کے عنوان سے ہونے والے پیدل مارچ کے اختتام پر حرم امام رضا(ع) کے صحن جامع رضوی میں خطاب کرتے ہوئے کہا: ہماری عوام دشمن شناس اور با بصیرت ہے اور دشمن کی رفتار، گفتار اور ان کے پلید مقاصد کو اچھی طرح پہچانتی ہے،آج اگر ہماری عوام دشمن شناس نہ ہوتی تو جس دشمن کو دروازے سے باہر نکالا تھا کھڑکی سے دوبارہ اندر آجاتا ۔
وضاحت دیتے ہوئے فرمایا: دشمن ہر لمحہ غلط فائدہ اٹھانے کی تلاش میں رہتا ہے؛ ایک دن ووٹنگ اور انتخابات کا بہانہ بنا کر کہتا ہے کہ عوام کے ووٹوں کا کیا بنا، اور دوسرے  دن عوام کی روٹی کا بہانہ بنا لیتاہے؛ لیکن درحقیقت دشمن کا مقصد ہرگز لوگوں کے ووٹ اور معیشت نہیں ہے، بلکہ ایران پر قبضہ کرنے کی کوشش میں ہے اور یقیناً وہ اپنی اس خواھش کو قبر میں لے جائے گا۔
مجلس خبرگان رہبری کے اعلی رکن نے کہا کہ دشمن معاشرے میں اختلاف پھیلانے اوراس کو چند حصوں میں تقسیم کرنے کی فکر میں ہے ، انہوں نے کہا: دشمن لوگوں کو نظام اور حکومت سے جدا کرنا چاہتا ہے، لوگوں کو لوگوں سے دور اور ان کے درمیان اختلاف ڈالنا چاہتا ہے تاکہ ملکی ترقی و پیشرفت کو روک سکے ، عوامی مشکلات کو حل کرنے جیسے مسائل حاشیہ میں چلے جائیں اور ناامنی و افراتفری اہم مسائل میں شمار ہونے لگیں۔
انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ لوگوں کے مسائل حل کرنا سرکاری حکام اور ملک کے تمام عہدیداران کی اصلی ذمہ داری ہے ، انہوں نے کہا: دشمن انتقام لینا چاہتا ہے اور اس کے لئے موقع کی تلاش میں ہے۔
حکومتی مصلحتوں کو تشخیص دینے والی کونسل کے رکن نے بتایا: عراق اور سوریہ میں استقامتی اسلامی محاذ پر فتح، یمن میں بہت بڑے فتنہ کا برملا ہونا اور انصاری اللہ کی برتری نے دشمن کو خشمگین کر دیا ہے جس کی وجہ سے انتقام لینا چاہتا ہے۔
امریکہ سے جنگ لڑنے کا بہترین راستہ؛ عوام کی مشکلات کا حل کرنا ہے
انہوں نے اپنی گفتگو کے دوسرے حصہ میں تاکید کرتے ہوئے کہا: آج استکباراور امریکہ سے مقابلہ کرنے کا بہترین راستہ یہ ہے کہ تلاش وکوشش اور کام سے لوگوں کی مشکلات کو حل کیا جائے اور عوام میں زندگی کی امید پیداکی جائے۔
حجت الاسلام والمسلمین رئیسی نے فرمایا:’’آج ہر وہ شخص جو ملکی ترقی اور عوام میں امید پیدا کرنے کی تلاش کر رہا ہے درحقیت امریکہ سے جنگ لڑ رہا ہے اور اسلامی انقلاب کی بنیادوں کو محکم بنا رہا ہے‘‘، انہوں نے کہا: ہرچھوٹے سے چھوٹا ایسا اقدام جس سے عوام میں ناامیدی پیدا ہو یا ہر ایسا قدم جو سرکاری حکام کو ناکارہ دکھانے کی کوشش کرے ، چاہئے یہ کام جان بوجھ کر انجام دے یا بھول کر درحقیقت وہ دشمن کی مدد کررہا ہے۔
تینوں ادارہ معاشرتی عدالت قائم کرنے اور غربت کے خاتمہ کے لئے تلاش وکوشش کریں
انہوں نے وضاحت دیتے ہوئے کہا: اس وقت ۱۳۹۷ ہجری شمسی کا بجٹ پارلیمنٹ میں ہے اور اگر پارلیمنٹ کے اراکین جتنا زیادہ بجٹ غربت کے خاتمہ اور معاشرتی عدالت قائم کرنے کے لئے مختص کریں گے ؛ معاشرے میں اسی مقدار میں خوشحال آئے گی۔ عدالتی نظام میں جتنا زیادہ فساد ہوگا، لوگوں کا اعتماد اسی نسبت سے کم ہوتا جائے گا اور اگر مختلف حکومتی اداروں میں تلاش وکوشش اور کام انجام دیا جائے گا تو لوگوں کا اعتماد بحال ہوگا ۔
آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے بتایا: آج کا بے مثال اجتماع جو کہ ہفتہ میں دوسری بار انجام دیا گیا ہے ، ہماری غیرت مند عوام نے دین، اسلامی انقلاب اور ولایت کے ساتھ عہد وپیمان کا دفاع کرتے ہوئے با بصیرت ہونے کو ثابت کردیا اور یقیناً ہمیں اس بات پر خدا کا شکر گزار ہونا چاہئے۔
ان کا مزید یہ کہنا تھا: دنیا کی بہت ساری حکومتیں اپنے ملک کی قدرت اور امنیت کو محفوظ رکھنے کے لئے معیشتی اور مالی ذخائر،فوجی طاقت یا دوسرے قدرتمند ممالک پر بھروسہ کرتی ہیں، لیکن ہمارے ملک کی قدرت اور امنیت کی اہم ترین وجوہات انقلاب و رھبرکی شیدائی مومن عوام، بصیرت،ظلم ستیزی و استکبار ستیزی کا جذبہ اور عوام کا بالخصوص جوانوں کا خظرات سے نہ ڈرنا ہے۔
مجلس خبرگان رھبری نے بتایا: دشمن اس بات کا اعتراف کرتے ہیں کہ اس چالیس سال کے عرصے میں انقلاب کی ابتدا سے لے کر جنگ کے تمام فراز و نشیب سمیت جس چیز نے ایرانی قوم کو ان انقلابی نعروں پرپابند رکھا وہ با بصیرت رہبر ہیں۔
عوام کا حکومت پر اعتماد، حکومت کا اہم ترین سرمایہ ہے
انہوں نے کہا کہ جنگ و جہاد کا جذبہ، ھدف تک پہنچنے کے لئے استقامت و مقاومت اور دشمن کو اہمیت نہ دینا، چند ایک دوسری ایسی خصوصیات ہیں جن کی وجہ سے قومی قدرت اور امنیت باقی ہے، انہوں نے تاکید کرتے ہوئے کہا: لوگوں کا حکومت پر اعتماد سب سے بڑا سرمایہ ہے اور دشمن بھی اسی سرمایہ کو ہدف بنا رہا ہے ۔
حجت الاسلام والمسلمین رئیسی نے گفتگو کو جاری رکھتے ہوئے کہا: دشمن نے مختلف فتنوں کے ذریعہ عوام کا حکومت پر اعتماد کم کرنے کی کوشش کی ہے ۔ ۸۸ ہجری شمسی میں ہونے والے فتنے سے پہلے اور بعد میں کئے جانے والے تجزئیے اس بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ دشمن نے عوام کے اعتماد کو نشانہ بنایا تھا۔
انہوں نے وضاحت دیتے ہوئے کہا: آج ملکی پیشرفت، توسعہ، اقتصادی اور معیشتی مسائل کا حل اور ہر مشکل کا حؒ فقط اور فقط معاشرے میں قومی وحدت ویکجہتی سے ممکن ہے۔
حکومتی مصلحتوں کو تشخیص دینے والی کونسل کے اعلیٰ رکن نے کہا: افراتفری اور ناامنی ہرگز عوام کی منفعت میں نہیں ہے بلکہ اس لئے ہے تاکہ عوام کی مشکلات کو حل کرنے پر متمرکز ہونے سے منحرف کیا جا سکے۔
انہوں نے گفتگو کو جاری رکھتے ہوئے کہا؛ ہماری عوام دشمن کے پراپگینڈوں سے اچھی طرح واقف ہے اور اسی وجہ سے فتنہ کو روکنے میں کامیاب رہی، جیسا کہ ۸۸ شمسی کے دی ماہ کی نو تاریخ کو سیاسی پارٹیوں سے بالاتر ہو کر ولایت و رھبری اور خون شہداء کے عشق میں عوام میدان میں آئی اور فتنہ کو جڑوں سے اکھاڑ پھینکا۔
عدالتی اور امنیت قائم کرنے والے اداروں کو چاہئے کہ ہمیشہ کے لئے ملک سے ناامنی کا خاتمہ کریں
آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے تاکید کرتے ہوئے کہا: عدالتی اور امنیتی اداروں سے درخواست کرتے ہیں کہ ان عناصر کی شناسائی کر کے ہمیشہ کے لئے ناامنی کا ملک سے خاتمہ کریں۔
انہوں نے آشوب بپا کرنے والوں کو ملکی نا امنی کا ذمہ داری قرار دیتے ہوئے کہا: دشمن لوگوں کی مشکلات کو بہانہ بناتے ہوئے حکومت کے خلاف کرنا چاہتے تھے ، البتہ لوگوں کی مشکلات تھیں لیکن انہیں قانونی ذرائع سے حل کیا جانا چاہئے تھا نہ کہ آشوب اور افراتفری کے ذریعے۔
حجت الاسلام والمسلمین رئیسی نے بتایا: سب کو پتہ چل گیا ہے کہ یہ آواز ایرانی قوم کی حمایت میں اٹھی جانے والی آواز نہیں ہے،یہ روش اور طریقہ اسلامی انقلاب کے مخالفوں کا ہے اور اسی وجہ سے لوگوں نے فتنہ بپا کرنے والوں کو میدان میں اکیلا چھوڑ دیا اورعوامی بسیج کے ساتھ مل کر ناامنی اور افراتفری کا خاتمہ کیا۔
انہوں نے وضاحت دیتے ہوئے کہا: ہمیشہ بصیرت کے ساتھ میدان میں آنا چاہئے ، دشمن دشمنی کے بہانوں کی تلاش میں ہے اور ہر کوئی جو سیاسی اور معاشرتی میدان میں سرگرم ہے انہیں چاہئے کہ ہوشیاری اور بصیرت کے ساتھ دشمن کے تمام پروپگینڈوں کو خنثیٰ کریں۔
آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے تاکید کرتے ہوئے کہا کہ آج ہر شخص کی ذمہ داری ہے کہ تلاش وکوشش کریں تاکہ قدرت اور قومی امنیت میں اضافہ ہو، انہوں نے بتایا: آج معاشرے میں اتحاد ویکجہتی کی ضرورت ہے سب نے دشمن کو پہچان لیا ہے اور اپنی نفرت کا اظہار اعلناً کر رہے ہیں اور کوشش کر رہے ہیں تاکہ فتنوں کو ختم کیا جا سکے۔
انہوں نے وضاحت دیتے ہوئے کہا: سب کو چاہئے کہ امریکہ کے ساتھ عملی مقابلہ کے لئے تلاش کریں ، رہبر معظم انقلاب اسلامی نے اسے معیشتی استقامت اور اقدام وعمل کا نام دیا ہے ۔
حکومتی مصلحتوں کو تشخیص دینے والی کونسل کے رکن نے کہا: لوگوں نے منافقوں کے مظالم اور قدرت طلبی کا مشاہدہ کیا ہے ؛ عوام کا میدان میں آنا قابل قدر ہے اور عوام کا میدان میں آنے کا مطلب یہ ہے کہ انقلابیوں کو امید دینا، دشمنوں ، منافقوں ، قدرت طلبوں اور ملک کے ہر دشمن کو نا امید کرنا ہے۔  
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...