خبر
9/5/2016
عرفہ

 
عرفہ

عَرَفَۃ" عربی زبان کا لفظ ہے جو مادہ "ع ر ف" سے کسی چیز کے آثار میں تفکر اور تدبر کے ساتھ اس کی شناخت اور ادراک کے معنی میں آتا ہے۔عرفہ کا نام سرزمین عرفات(مکہ مکرمه کی وہ جگہ جہاں حاجی توقف کرتے ہیں) سے ماخوذ ہے اور عرفات کو اسلئے عرفات کہا جاتا ہے کہ یہ پہاڑوں کے درمیان ایک مشخص اور شناختہ شدہ زمین ہے اسلئے اسے عرفات کہا جاتا ہے۔مکہ مکرمہکی قدیم تاریخجیسے اخبار مکۃ میں مصنف لکھتے ہیں کہ سرزمین عرفات کو چہ بسا عرفہ بھی کہا جاتا ہے۔ دسویں صدی ہجریکے تاریخ دان معتقد ہیں کہ لفظ عرفات"قصبات"(قصبہ کا جمع) کی طرح ہے اور ہر جز کو عرفہ کہا جاتا ہے جبکہ پورے منطقہ کو عرفات کہا جاتا ہے۔
• روز عرفہ مناسک حجکا آغاز ہے اس دن حاجی میدان عرفات میں جمع ہوتے ہیں اور دعا اور استغفار کے ساتھ حج جیسے فریضے کی ادائیگی کی توفیق نصیب ہونے پر خدا کا شکر بجا لاتے ہیں۔ اس دن کی اہمیت کے پیش نظر معصومین(ع)سے اس دن کے مخصوص اعمال، دعا اور مناجات وارد ہوئے ہیں۔ان میں سے مشہور ترین دعا، دعائے عرفہ امام حسین(ع)جو دعائے عرفہکے نام سے معروف ہے جسے امام حسین(ع) نے میدان عرفات میں پڑھی ہے اور شیعیان جہان اپنے امام کی اقتداء میں میدان عرفات میں اور دنیا کے دیگر مناطق میں اس دن اس دعا کے پڑھنے کا اہتمام کرتے ہیں۔ ایک اور دعا بھی اس دن پڑھنے کی تاکید ہوئی ہے جو امام سجاد(ع) سے وارد ہوا ہے۔
• بہت ساری احادیث میں اس دن کو گناہوں کے بخشے جانے کا خصوصی دن قرار دیا گیا ہے۔
• دعا قبول ہونے کا دن۔
• ائمہ معصومیناس دن کیلئے ایک خاص احترام کے قائل تھے اور لوگوں کو اس دن کی اہمیت سے روشناس کراتے اور انہیں اس دن کے اعمال کی طرف متوجہ کراتے تھے اور کبھی بھی کسی سائل کو خالی ہاتھ واپس نہیں بھیجتے تھے۔
• شیعہفقہکے مطابق حاجیوںپر ذوالحجہکی نویں تاریخ کو ظہرسے مغربتک میدان عرفاتمیں توقفکرنا واجبہے۔ یہ توقف حجکے ارکان میں سے ہے۔ یعنی اگر کوئی حاجی عرفات نہ جائے اور وہاں کچھ وقت توقف نہ کرے تو اس کا حج باطل ہے۔
• اہل سنتکے مذاہبعرفہ کے دن عرفات میں توقف کے وقت میں اختلاف نظر رکھتے ہیں:
1. دسویں ذوالحجہ، مغرب سے عیدکی صبح ہونے تک؛
2. انویں ذوالحجہ کی صبح سے لے کر عید کی صبح تک؛
3. نویں ذوالحجہ ظہر سے عید قربان کی صبح تک۔
روز عرفہ کی مستحبات
روز عرفہ کے بہت زیادہ مستحباعمال احادیث میں وارد ہوئی ہیں جن میں سے بعض یوں ہیں:
• احادیث کے مطابق دعااور استغفارروز عرفہ کے بافضیلت ترین اعمال میں سے ہے۔ اور دعاوں میں وہ دعا جسے امام حسین(ع)نے اس دن پڑھی اور یہ دعائے عرفہکے نام سے مشہور ہے کے پڑھنے کی بہت سفارش ہوئی ہے۔
• غسل. کرنا۔
• زیارت امام حسین(ع(۔
• منامیں بیتوتہ کرنا یعنی شب عرفہ کو غروب سے لے کر صبح تک منا میں ٹھرنا۔
• صدقہدینا۔
• روزہرکھنا۔

 
وزٹرز کی تعداد:2581
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...