خبر
12/1/2019
اسلام میں ذہنی  پاکیزگي  پر تاکید کا اہم ترین مقصد حیات طیبہ کا حصول ہے

 
اسلام میں ذہنی پاکیزگي پر تاکید کا اہم ترین مقصد حیات طیبہ کا حصول ہے

معروف  ماہر نفسیات  اور ممتاز عالم دین حجت الاسلام مسعود آذربائیجانی  نے   کہا ہے   کہ  اسلام میں ذہنی اور نفسیاتی پاکیزگی کا اہم ترین   مقصد ایک پاکیزہ زندگی کا حصول اور حیات طیبہ تک رسائی حاصل کرنا ہے۔ 

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛ آستان قدس رضوی کے  اسلامی تحقیقاتی فاؤنڈیشن کے شیخ طبرسی ہال میں ’’ذہنی اور نفسیاتی پاکیزگی ‘‘ کے موضوع پر ایک     ورکشاپ منعقد کی گئی جس میں ماہر نفسیات   حجت الاسلام والمسلمین مسعود آذربائیجانی نے اسلام میں نفسیاتی نکتہ نظر سے نفسیاتی اور ذہنی سلامتی و پاکیزگی کو  حاصل کرنے کے طریقے بیان کئے ۔ 

انہوں نے  کہا کہ آج کے دور کے انسان کی ایک مشکل یہ ہے کہ اس نے اپنے آپ کو حد سے زیادہ مادّیات میں الجھا لیا ہے اور  معنویت  و روحانیت سے    بیگانہ ہوگیا ہے   ۔ انہوں نے کہا  کہ  اگرچہ ذہنی سلامتی کے حصول کے لئے مادّی امور بھی اہم اور ضروری ہیں لیکن ان امور پرحد سے  زیادہ توجہ انسان کا ذہنی سکون ختم کر دیتی ہے ۔ 

انہوں  نے  کہا کہ اگر انسان   دنیا کو ہی اپنا مقصد قرار دے دے   تو وہ  کبھی  بھی چین و  سکون حاصل نہیں کر سکے گا    اس لئے   دنیا اور مادّیات کی طرف  انسان  کی توجہ  حد اعتدال میں ہونی چاہئے     ۔ 

حجت الاسلام  مسعود آذربائیجانی  نے   کہا    کہ انسان کو روحانی  و معنوی  ترقی کے حصول کے لئے تین میم(م) پر غلبہ حاصل کرنا ہوتا ہے   ؛مادّیات،منیت (انا نیت ) اور موقعیت(مقام و منصب) ان کا   کہنا تھا   اگر ہم مادی امور اور اپنی شہرت  اور منصب  پر توجہ اور اہمیت نہ دیں    تو ذہنی سلامتی کوزیادہ سے زیادہ حاصل کر سکتے ہیں۔ 

انہوں نے  کہا  کہ ذہنی پاکیزگی و سلامتی  کا پہلا مرحلہ ضروریات زندگي کا حصول ہے ،دوسرے مرحلے میں نفسیاتی ضروریات کا حصول اور تیسرے مرحلے میں انسان کی معنوی و    روحانی ضروریات کا پورا  ہونا ہے البتہ ان تینوں امور میں تیسرے مرحلے پر سب سے کم     توجہ دی جاتی ہے ۔ 

حجت الاسلام مسعود آذربائيجانی نے  کہا کہ   ذہنی پاکیزگی اور سلامتی کا ایک معیار اور لازمہ آس پا س کے لوگوں کے ساتھ   مضبوط سماجی تعلقات کو برقرار کرنا  اور زندگی کے سخت ترین حالات سے سمجھوتہ کرنا ہے   

ان  کا کہنا تھا کہ  بعض اوقات زندگی میں سخت اور بحرانی حالات کا   سامنا کرنا پڑتا ہے اور  جو شخص ذہنی طور پر صحتمند ہے وہ ان مشکلات و سختیوں کے ساتھ مدارا کرتا ہے اور اپنے آپ کو ان سخت حالات  میں بھی اضطراب اور پریشانیوں سے بچا لیتا ہے 

ماہر نفسیات   مسعود آذربائیجانی نے  کہا کہ سختیوں اور مشکلات سے نجات کے لئے انسان کو مادّی امور کے علاوہ روحانی و معنوی پناہ گاہ  اور توسل و توکل کی بھی ضرورت ہوتی ہے ۔ان کا کہنا تھا  کہ اگر جسمانی، نفسیاتی،معاشرتی اور روحانی طور پر مطلوبہ خصوصیات انسان میں   پائی جائیں گي  تو وہ  اسلام میں ذہنی پاکیزگی کا جو ہدف ہے یعنی حیات طیبہ یا پاکیزہ زندگی   ،  وہ  حاصل کرلے گا 
 



   
وزٹرز کی تعداد:26
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...