خبر
8/2/2019
قرآن کریم میں حج ابراہیمی کے زیرعنوان آن لائن سیمینار

 
قرآن کریم میں حج ابراہیمی کے زیرعنوان آن لائن سیمینار

تہران یونیورسٹی میں قائم اسلامی انقلاب کے اعلی ریسرچ سینٹر کے زیراہتمام  اور حج کے امور میں رہبرانقلاب اسلامی کے نمائندہ دفترنیز آستان قدس رضوی کے اسلامی تحقیقاتی فاؤنڈیشن کے تعاون سے قران کریم میں حج ابراہیمی کے زیرعنوان اردو زبان میں ایک آن لائن سیمینار منعقد کیا گیا  

ہمارے نمائندے کے مطابق، اس آنلائن سیمینار میں، ایرانی اور غیرملکی علما ، محققین اور مہمانوں نے "حج اور مشرکین سے برائت  "   " حج اورتمدن سازی میں بین الاقوامی تعلقات پر اس کے اثرات کے موضوعات پر اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا  

نئی دہلی میں  متعین رہبر انقلاب اسلامی کے نمائندے، حجت الاسلام و المسلمین مہدوی پور، ہندوستان کے صوفیہ مسلک کے علمائے اہل سنت کی کونسل کے سربراہ  سید متین علی شاہ قادری، ایران کے سحر اردو ٹی وی کے سابق ڈائیریکٹر، امیر علی زینعلی، ہندوستان کے  شہر لکھنؤ کی جامعہ الزہرا کی پرنسپل  اور گوہرشاد عالمی ایوارڈ یافتہ محترمہ رباب زیدی، تنزانیہ کی سابق رکن پارلیمنٹ مدیحہ رسول محقق اور تنزانیہ کے معروف عالم دین شیخ علی ہادی زیدی ، اس ویب بیسڈ سیمینار کے مقررین میں سے تھے۔

 آن لائن سیمینارکے دوران، آستان قدس رضوی کے تحقیقاتی فاؤنڈیشن میں بین الاقوامی تعلقات کے ریسرچ اسکالر غلام رضا کحلکی نے "کمیونیکیشن اور حج کے تمدن ساز پہلووں پر اس کے اثرات" پر روشنی ڈالی اور بتایا کہ حج کے ایسے عظیم پہلو ہیں جن پر مختلف روحانی نقطہ نگاہ سے روشنی ڈالی جا سکتی ہے۔ انہوں نے اس سلسلے میں میڈیا کے کردار کو اجاگر کیا اور کہا کہ : ذرائع ابلاغ جو تصور اور تصویر پیش کرتے ہیں ناظرین بہرحال اس سے متاثر ہوتے ہیں؛ دراصل یہ میڈیا ہے جو اپنے دیکھنے والوں سے کہتا ہے کہ کس بارے میں سوچیں۔

غلام رضا کحلکی نے مزید کہا کہ: تشہیرات کے ذریعے پیش کردہ تصاویر اور اس کےاثرات  کے نتیجے میں، افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ مسلمان متحد ہونے کے  اپنے مقصد کو  بھول بیٹھے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اصول توحید تمام مسلمانوں کا یکساں اور مشترکہ موضوع ہے لیکن ذرائع ابلاغ  اور امریکہ اور صیہونی حکومت جیسی طاقتیں مسلمانوں کے اتحاد و يگانگت کو پارہ پارہ کرنے میں لگی ہوئی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا نے مسلم معاشرے کو جس میں یہ صلاحیت ہے کہ اسے دنیا کی سب سے باعظمت قوم کہا جائے، ایک دوسرے سے دور کردیا ہے اور وہ چاہتا ہے کہ مسلمان آپس میں متحد نہ ہوسکیں ۔

غلام رضا کحلکی نے اس بات کا ذکرکرتے ہوئے کہ حج اور اربعین جیسے واقعات اور زیارت کی سنت نے  میڈیا کی اس سازش کو کافی حد تک بے اثر بنایا ہے کہا کہ حج اور اربعین جیسے واقعات نے مسلمانوں کے اتحاد کو تقویت بخشی  ہے 

انہوں نے کہا کہ  حج سے مسلمانوں کے درمیان قربت اور محبت کے احساس کو فروغ ملتا ہے اور یہ عبادی و سیاسی فریضہ تمام مسلمانوں سے متعلق ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حج نے مسلم معاشروں کو سافٹ پاور دیا ہے جو انتہائی قیمتی ہے۔

آستان قدس رضوی کے تحقیقاتی فاؤنڈیشن سے منسلک اسکالر غلام رضا کحلکی نے سعودی حکام پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ: افسوس کہ سعودی عرب حج کے دوران صحیح میزبانی کے اپنے فرائض ادا نہیں کرسکا ہے اور دنیا بھر کے مسلمان ابھی بھی منا کے حادثے اور اس میں شہید ہونے والے ہزاروں حاجیوں کو فراموش نہیں کرسکے ہیں  

قابل ذکر ہے کہ، انہیں موضوعات کے تحت، انگریزی، ملایو، فرانسیسی اور ترکی زبان میں چار دیگر ویب بیسڈ آنلائن سیمینار منعقد کئے گئے  اور "حج اور اسلامی برادری" کے عنوان کے تحت عربی زبان میں بھی ایک آنلائن نشست منعقد کی جائے گی۔ 
 
   
وزٹرز کی تعداد:43
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...