خبر
11/5/2019
اسلامی انقلاب نے امریکا کے ہاتھ کاٹ دیے، جنرل رحیم صفوی

 
اسلامی انقلاب نے امریکا کے ہاتھ کاٹ دیے، جنرل رحیم صفوی

اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کے سپریم کمانڈر آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای کے فوجی مشیر جنرل رحیم صفوی نے کہا ہے کہ اسلامی انقلاب نے ایران کے مفادات سے امریکا کے ہاتھ کاٹ دیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سبھی جوانوں کوبا خبر رہنا چاہئے کہ امریکیوں کی صرف ایران کے ساتھ مشکل نہیں ہے بلکہ وہ پورے علاقے پر مسلط ہونا چاہتے ہیں۔

آستان نیوز کی رپورٹ کےمطابق، چارنومبر ایران میں سامراج کے خلاف جد وجہد کے قومی دن کی مناسبت سے حرم مطہر رضوی کے امام خمینی ہال میں علماء اور طلباء کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جنرل سید یحیی رحیم صفوی نے کہا: 28خرداد (18 / جون)کی بغاوت ، ایران میں عصر حاضر کا ایک بڑا واقعہ تھا کہ جو پہلوی حکومت کے  بارہویں سال واقع ہوا اور پہلوی شاہی حکومت کے استحکام کا سبب بنا۔ اس کے بعد ایران میں امریکیوں نے، انگریزوں کی جگہ لے لی

رہبرانقلاب اسلامی کے فوجی مشیرنے کہا: امریکی اس روز کے بعد ایرانی بادشاہ کے ذریعہ اپنی تمام خواہشات کو عملی جامہ پہنانے کی فکر میں لگ گئے تھے اور شاہ بھی ہر طرح سے ان کی غلامی کررہا تھا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ جس وقت اسلامی انقلاب برپا ہوا، امریکیوں کو بہت بڑاجھٹکا لگا اوراب وہ  ہمیشہ غیرانسانی روشوں سے ایرانی قوم کو کمزور کرنے کے درپئے رہتے ہیں

جنرل رحیم صفوی نے کہا: امریکہ کے بے ادب و بدتمیز صدر نے اپنے تازہ بیان میں کہا ہے کہ " ہم کو صرف شام کا تیل چاہیے" وہ چاہتا ہے کہ اس علاقے کا امن تباہ کردے ۔

انہوں نے تہران میں امریکا کے جاسوسی کے اڈے پر قبضے کی سالگرہ 
کی طرف اشارہ کیا اور کہا کہ یونیورسٹیوں کے انقلابی طلبا کے ذریعہ امریکہ کے جاسوسی اڈے پر قبضے کو امام خمینی نے انقلاب دوم کا نام دیا تھا  اوراس واقعے کی اپنی خاص اہمیت تھی کہ جس کی طرف بہت سے ماہرین ، مفکرین اور نظریہ پردازوں کی توجہ مبذول ہوئي ۔

جنرل رحیم صفوی نے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ انقلاب کے ان 40 برسوں میں ایران نے بہت زیادہ ترقی کی ہے  کہا: "روشیں، حوادث اور رہنمائیاں" یہ تین بنیادی کلمات ہیں کہ ہم ان کے ذیل میں امریکہ کی حکومت اور ایران کے اسلامی انقلاب پر غور کریں تاکہ حقیقت میں ان 40 برسوں میں ایرانی قوم  کی ترقی کو درک کرسکیں۔

جنرل رحیم صفوی نے کہا: ہمارے علاقے اور دنیا کے مختلف علاقوں میں کسی حد تک بیداری آئی ہے ، بہت سی قومیں اب امریکہ کی ڈکٹیٹرشپ کو تسلیم نہیں کرتیں، لہذا ہر طرف سے اعتراضات ہورہے ہیں۔ شام میں امریکہ کے بنائے ہوئے دہشت گرد گروہ داعش سے بہت زیادہ نقصان ہوا ہے  انہوں نے کہا: اب ٹرمپ کہتا ہے کہ ابوبکر بغدادی کو قتل کردیا گیا ہے کبھی بھی اس کی باتوں پر یقین نہ کریں ۔

جنرل رحیم صفوی نے کہا: لبنان و عراق میں تازہ واقعات اورفسادات بھی امریکہ کے ہی فتنے ہیں اور انشاء اللہ خدا کے فضل سے امریکہ یہاں بھی بہت جلد شکست کھائے گا ۔

انہوں نے کہا: ایران کے اسلامی انقلاب کے 40 برسوں میں ایران اور اس علاقے میں دو اہم ترین واقعات رونما ہوئے جن میں سے ایک امریکہ کی جانب سے انسان دشمنی پر مبنی تھا  کہ جس  کا مقصد آمرانہ نظام کو قائم کرنا  اور دنیا کے مال ودولت کو ہڑپنا تھا اور دوسرا اس کےمقابلے میں عوام کی حریت پسندی کی تحریک اوراستقامت کا مظاہرہ تھا   

رہبرانقلاب اسلامی کے فوجی مشیرنے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ امریکہ اب زوال کی طرف آگے بڑھ رہا ہے کہا: امریکی حکومت نے ایران کو  گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کرنے کے لیے ہر طرح کے حربے  استعمال کیے لیکن اب اس نے خود گھٹنے ٹیک دیے ہیں اور اب الحمد للہ ایران ایک ناقابل تسخیر قوت میں تبدیل ہوچکا ہے ۔

انہوں نے مزید کہا: اب امریکہ سپرپاور نہیں رہا ہے اور وہ عالمی سطح پرکمزور پڑتا جارہا ہے
رحیم صفوی نے کہا کہ: اب رہبرانقلاب اسلامی  اپنے مدبرانہ اور قائدانہ نظریات اور رہنمائیوں سے دنیا میں ایران کی  ترقی و اسلامی بیداری کوباور کرانے  اور سامراجی قوتوں کو شکست دینے کی جانب آگے بڑھ رہے ہیں 

   
وزٹرز کی تعداد:26
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...