خبر
10/31/2019
آستان قدس رضوی کے ثقافتی امور میں کبھی بھی  اعداد و شمار اور مقدار پر نگاہ نہ کی جائے

 
آستان قدس رضوی کے ثقافتی امور میں کبھی بھی اعداد و شمار اور مقدار پر نگاہ نہ کی جائے

آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے ثقافتی امور اورزائرین کی دینی معرفت میں اضافہ کو آستان قدس رضوی کیی اولین ترجیح قراردیا۔

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق شیخ احمد مروی نے بعض مولفین و اہل قلم سے ملاقات کے دوران اس بات پر تاکید کرتے ہوئے کہ آستان قدس رضوی کی کوشش ثقافتی امور کی تقویت ہے ، کہا: حرم مطہر رضوی،عمارتوں کی تعمیر اور عمومی خدمات کے لحاظ سے اچھی پیشرفت کرچکا ہے اور ہماری آئندہ ترجیح ثقافتی امور ہو گی۔

آستان قدس رضوی کے محترم متولی نے قرآن کریم کے  نئے ترجموں میں جدید روش کو اپنانے پر  زور دیتے ہوئے کہا ؛  حرم مطہر میں موجود قرآن کریم اور دعاؤں کی کتابوں کو مختلف سن و سال کے لحا ظ سے ترجمہ کیا جانا چاہئے۔ انھوں نے مثال کے طور پر کہا کہ کتاب "عیون اخبار الرضا" جدید روش اور سلیس
و روان ترجمہ کے ساتھ حرم مطہر کی کتابوں کی الماریوں میں رکھی جائے تاکہ زائرین بہتر استفادہ کرسکیں۔

شیخ مروی نے ثقافتی امور میں اعداد و شمار اور کمیت کو ایک طرح کی آفت قرار دیا اور کہا: ثقافتی سلسلے میں کبھی بھی کمیت و اعداد و شمار کو نہیں دیکھنا
چاہیے،آستان قدس رضوی میں چاہے سال بھر میں صرف ایک کتاب طبع و منتشر ہو لیکن وہ کتاب مخاطب پسند اور موثر ہونی چاہیے۔

انہوں نے کہا: آستان قدس رضوی کا اصلی مقصد شہر مشہد اور حرم مطہررضوی میں ثقافتی امور اورزائرین کی دینی معرفت میں اضافہ ہے ۔

قابل ذکر ہے کہ اس ملاقات کے آغاز میں بعض اہل قلم اور سربرآوردہ شخصیتوں نے دینی کتابوں کی کیفیت میں ارتقاء اور بہتری کے متعلق  اپنے اپنے نظریات بیان کیے۔
 
 
وزٹرز کی تعداد:51
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...