خبر
5/27/2019
اولیائے خدا نے ہمیں  ظالموں کے مقابلے میں ڈٹ جانے کی تعلیم دی ہے؛شب قدر میں آیت اللہ رئیسی کا  خطاب

 
اولیائے خدا نے ہمیں ظالموں کے مقابلے میں ڈٹ جانے کی تعلیم دی ہے؛شب قدر میں آیت اللہ رئیسی کا خطاب

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛اکیس ماہ مبارک رمضان کی شب  امیرالمومنین حضرت علی بن ابی طالب علیہ   السلام کی شب شہادت اور  شب قدر ہے ۔    اس موقع پر  اعمال شب قدر کی انجام دہی کے لئے  حرم مطہر رضوی میں شریک لاکھوں کے ا جتماع سے خطاب  کرتے ہوئے  عدلیہ  کے سربراہ آیت اللہ سید ابراہیم رئیسی نے    کہا کہ شب قدر    ایک کامل  اور جامع  کتاب   یعنی قرآن کریم کے ایک   انسان کامل  یعنی پیغمبر گرامی اسلام(ص) کے قلب مطہر پر نازل ہونے  کی شب ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ شب قدر کی حقیقت یعنی الہی ہدایت کے سائے میں انسان کا سعادت مند ہونا ہے۔

انہوں نے  کہا کہ شب قدر   میں پروردگار کی جانب سے فیوضات اور برکات   امام زمان (عج) سے توسط سے سب تک پہنچتی ہیں ۔ ان کا کہنا تھا    کہ امام معصوم علیہ السلام سے روایت منقول ہے جس میں امام علیہ السلام نے شیعوں سے مخاطب ہو کر فرمایا کہ سورہ قدر کے ذریعہ امامت و ولایت کے منکروں سے احتجاج کریں تاکہ کامیاب ہو سکیں سورہ قدر در حقیقت امامت و ولایت کی سورہ ہے۔

عدلیہ کے سربراہ آیت اللہ رئیسی کا کہنا تھا کہ خداوند متعال نے اپنے حبیب حضرت  محمد مصطفی(ص) کی امت کے لئے لیلۃ القدر جیسی رات کو قرار دیا تاکہ سو سالہ راستے کو ایک ہی رات میں طے کر سکے  انہوں نے کہا کہ  شب قدر در حقیقت حضرت فاطمہ زہرا(س)کی ولائی منزلت او ر مرتبے کی معرفت       اور امامت و ولایت کے دفاع کے لئے کی جانے والی ان کی فدارکاریوں کی شناخت کا نام ہے  ۔ اس لئے جو کوئی بھی چاہتا ہے کہ شب قدر کو درک کرے اسے چاہئے کہ حضرت زہرا سلام اللہ علیہا  کی عظمت  و مرتبہ کو پہچانے۔

 آیت اللہ رئیسی  نے  کہا  کہ  شب قدر میں انسان کی تقدیر لکھی جاتی ہے اگر انسان  اپنی تقدیر بنانے میں کوئی دخل نہ رکھتا ہوتا تو اسے ہرگز اس شب میں  شب بیداری اور عبادت کی دعوت  نہ دی جاتی

انہوں نے کہا کہ شب قدر    قرآن اور معلم قرآن یعنی آئمہ اطہار علیہم السلام کی طرف متوجہ ہونے کی رات ہے، شب قدر گذشتہ اعمال پر نظر ثانی اور گناہوں پر ندامت اور توبہ کرنے  اور آئندہ بہتر زندگی گزارنے کی منصوبہ بندی  کرنے کی رات ہے اور یقیناً شب قدر پروردگار کی طرف پلٹنے کا بہترین موقع ہے ۔

خبرگان رہبری کونسل کے رکن آیت اللہ رئیسی نے دنیا پرستی اور دنیا محوری کو انسانی سقوط کا پیش خیمہ  قرار دیتے ہوئے کہاکہ امیرالمؤمنین علی بن ابی طالب (ع) سب کو تقوی الہی اور خدا کی جانب پرواز کی نصحیت فرماتے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ماہ مبارک رمضان اپنے علاوہ دیگر افراد پر توجہ دینے کا نام ہے امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام نے  یتیموں اورہمسایوں کی نسبت توجہ  دینے پر بہت تاکید فرمائی اس کے علاوہ امربہ معروف اور نہی از منکر   ایسےدیگر جملہ  موضوعات ہیں  جن پر امیر کائنات بہت توجہ دیتے تھے آيت اللہ رئیسی نے کہا کہ سستی،رشوت خواری،فساد اور طبقاتی تفریق  جیسی بری خصوصیات  کااسلامی اور ولائی معاشرہ سے کوئی تعلق نہیں ہے، حضرت امام حسین علیہ السلام نے امربہ معروف اور نہی از منکر کے لئے اپنی جان فدا کر دی اور امیرالمومنین علی بن ابی طالب(ع) کو اس لئے محراب میں شہید کیا گیا کیوں کہ آپ ایک عادل امام تھے۔ انہوں نے کہا کہ  اولیائے خدا نے ہمیں  ظالموں کے مقابلے میں ڈٹ جانے کی تعلیم دی ہے۔  
وزٹرز کی تعداد:51
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...