خبر
4/30/2019
آستان قدس رضوی میں تمام فیصلے باہمی مشاورت سے ہوتے ہيں، متولی آستان قدس

 
آستان قدس رضوی میں تمام فیصلے باہمی مشاورت سے ہوتے ہيں، متولی آستان قدس

آستان قدس اور حرم مطہر     رضوی کے متولی نے کہا ہے کہ آستان قدس رضوی میں سبھی فیصلے باہمی صلاح و مشورے اور  اجتماعی  مشاورت سے ہوتے ہيں

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛   آستان قدس رضوی اور حرم مطہر کے متولی  حجت الاسلام والمسلمین احمد مروی نے حرم رضوی  کے ولایت ہال میں  آستان قدس رضوی کے مختلف اداروں کے سربراہوں، خدام    اور آئمہ جماعت سے   ملاقات  میں   آستان قدس رضوی کی تمام تر سرگرمیوں کو زائر محور قرار دیا  ۔   انہوں نے کہا  کہ زائرکا احترام  اور اس  کی عزت  کی جانی چاہئے خواہ   وہ کسی بھی تہذیب وثقافت سے وابستہ  ہو  اور یہ ہمارے لئے سب سے ضروری ہے  ۔ انہوں نے  کہا کہ ہمیں یہ جان لینا چاہئے کہ حضرت امام علی رضا علیہ السلام ہمارے  تمام اعمال پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور ہم   امام رؤف کے حضور  ان  کے مہمانوں کے خدمتگزار ہیں۔

حرم مطہر کے متولی نے کہا کہ حضرت امام علی رضا علیہ السلام کے حر م میں خدمت کی ایک بنیادی شرط اور اہم رکن و اصول  نظم و ضبط اور مقررشدہ ذمہ داریوں کو احساس کرکے انہيں اچھے انداز میں انجام دینا ہے    ۔ حجت الاسلام شیخ احمد مروی نے کہا کہ  کہیں ایسا نہ ہو کہ بارگاہ  امام علی رضا علیہ السلام میں خدمت ایک روزمرّہ عادت میں تبدیل ہو جائے بنابریں   ان تمام کاموں کو صحیح انجام دینے کے لئے منظم پلاننگ اور منصوبہ بندی  کی ضرورت ہے۔

  حجت الاسلام والمسلمین مروی کا کہنا تھا کہ حرم رضوی کا    ادارہ کسی  کی ملکیت نہیں ہے  اور   یہ کوئی پرائیوٹ کمپنی یا ادارہ نہیں ہے  یا   اس ادارہ میں کوئی بھی افسر یا ماتحت نہيں ہے     بلکہ  یہ ایک روحانی و معنوی  ادارہ ہے جس کے مالک و مختار  حضرت امام علی رضا علیہ السلام ہیں اور ہم سب ان کے  خادم ہیں۔
انہوں نے کہ کہ اگر زائرین کی جانب سے   کوئي تجویز یا مشورہ دیا جائے  تو ہمیں چاہئے کھلے دل   اس کا استقبال کریں،  حضرت رضا علیہ السلام کی نورانی  بارگاہ کے خادم کی حیثیت سے مشکلات اور کمیوں  کو دور کرنے کے لئے   کوشش کریں کیونکہ لوگ  اس ادارہ کو اپنا   ادارہ سمجھتے ہیں۔

آستان قدس رضوی کے متولی  کا  کہنا تھا کہ حرم رضوی کا    احاطہ اور علاقہ    بہت وسیع و عریض  حصے پر محیط ہے اس لئے خادموں کو چاہئے کہ وہ اپنی اطلاعات کو  بڑھائيں اور حرم مطہر سے متعلق معلومات کو اپڈيٹ رکھیں  تاکہ زائرین کی صحیح راہنمائی کر سکیں اور ان کاموں کے لئے   تربیتی کلاسوں کی ضرورت ہے۔

انہوں نے   کہا کہ حرم رضوی میں کوئی ایسا اقدام انجام نہ دیا جائے جو زائرین کی ناراضگی یا زیارت کی راہ میں مشکلات  کا سبب بنے ، اس کے علاوہ حرم رضوی  کی عمارت  کو سیلاب و زلزلہ کے مقابلے میں   مستحکم بنانے پر توجہ دی جائے ۔

آستان قدس رضوی کے متولی شیخ احمد   مروی نے کہا کہ ہمارا قطعا یہ ارادہ نہیں ہے کہ ماہ مبارک رمضان میں افطار یا عام دنوں میں دسترخوان کے کھانے   کو حرم کے پروگراموں سے ختم  کر دیں لیکن حرم رضوی کے سربراہان نے متفقہ طور پر یہ فیصلہ کیا ہے کہ افطار و طعام کے اخراجات میں جتنا ممکن ہو سکے کمی کی جائے اور ان پیسوں کو سیلاب سے متاثرہ افراد اور جوانوں کی مشکلات کو حل کرنے پر خرچ کیا جائے ۔

   
وزٹرز کی تعداد:75
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...