خبر
7/10/2019
بین الاقوامی گوہر شاد ایوارڈ کا مقصد مثالی مسلمان خاتون کومتعارف کرنے کی ثقافت کو رواج دینا ہے

 
بین الاقوامی گوہر شاد ایوارڈ کا مقصد مثالی مسلمان خاتون کومتعارف کرنے کی ثقافت کو رواج دینا ہے

  "گوہر شاد بین الاقوامی ایوارڈ" کے سکریٹری علی سروری  نے چوتھے عالمی گوہرشاد ایوارڈ سے متعلق ایک پریس کانفرنس میں کہا  کہ آستان قدس رضوی کے لئے رہبر انقلاب اسلامی کے سات شقوں والے منشور کی چوتھی شق میں  قرآن اور اہل بیت عصمت و طہارت کی تعلیمات  کو زیادہ سے زیادہ رواج دینے پرخاص تاکید کی گئی ہے   
انھوں نے کہا  کہ ‍قرآن اور مکتب اہلبیت (ع) کی تعلیمات کو عام کرنے کا ایک طریقہ  مثالی مسلمان خا تون کی شخصیت کو روشناس کرانا ہے  - انہوں نے کہا کہ حضرت مریم و حضرت آسیہ نیز حضرت خدیجہ حضرت فاطمہ زہرا اور حضرت معصومہ سلام اللہ علیھم  جیسی عظیم المرتبت اسلامی خواتین کو قرآن اور اہلبیت کی تعلیمات و احادیث میں عظیم شخصیتوں کی حامل خواتین کے طور پر پیش کیا گيا ہے اور ان خواتین کی سیرت آج کی مسلمان عورت کے لئے نمونہ عمل ہے  

 قرآن  اور مکتب اهل بیت(ع) کی تعلیمات کی ترویج
علی سروری نے  کہا کہ آستان قدس رضوی کا ہدف یہ ہے کہ   قرآن  اور مکتب اہلبیت (ع) کی تعلیمات کی نشرواشاعت سیرت امام رضا (ع) کی روشنی میں جاری رہے۔ اس ہدف پر چلتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا کہ مختلف شعبوں میں  ممتاز اور کار خیر انجام دینے والی خواتین کی حوصلہ افزائي اوران کے کارناموں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے، امام علی بن موسی الرضا (ع) اور جناب فاطمہ معصومہ (س) کے ایام ولادت کے دوران ہر سال آٹھ خواتین کو چنا جائے اور انھیں انعامات دئے جائیں ۔ چنانچہ اس سال بھی سالہائے گزشتہ کی مانند 4 ایرانی خواتین اور 4 غیر ملکی خواتین کو ایوارڈ دئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

دانشور اور عالمہ خواتین کے نیٹ ورک کا قیام
بین الاقوامی  گوہرشاد ایوارڈ کے سکریٹری  نے کہا  کہ سب سے پہلا عالمی گوہر شاد ایوارڈ، حرم مطہر امام رضا (ع) میں سن 2016 میں آستان قدس رضوی کے ذمے داروں اور ایرانی غیرملکی  مہمانوں کی موجودگی میں دیا گیا تھا۔ اب تک 3 بار یہ فیسٹیول منقد ہوچکا ہے اور اس سال بھی یہ چوتھا جشن، عشرۂ کرامت کے ایام میں منعقد ہونے جا رہا ہے۔

انھوں نے  کہا کہ اس جشن کے منعقد کرنے کا مقصد یہ ہے کہ  مختلف شعبوں کی ممتاز اور مخیر خواتین کو ایک پلیٹ فارم پر لایا  جائے۔ انھوں نے   کہا کہ ہمیں امید ہے کہ گوہر شاد ایوارڈ پانے والی خواتین دائمی طور پر ہمارے اس سکریٹیریٹ سے رابطہ برقرار رکھیں گی ۔ اسی طرح آئندہ برسوں کے ایوارڈ کے لئے ممتاز خواتین کی نامزدگی، معاشرے میں کار خیر کے کاموں میں خصوصی طور پر جوانوں اور نوجوانوں کو ترغیب دینا، حضرت امام رضا (ع) کی شخصیت کے مختلف پہلوؤں کو اجاگر کرنا، امام ہشتم (ع) کے لئے دنیا بھر میں ہر جگہ اعزازی اور رضاکارانہ طور پر خدمات انجام دینا، اپنے کارخیر کے کاموں کے تجربے کو دوسری خواتین خصوصا" اس تنظیم اور گوہر شاد ایوارڈ یافتہ خواتین کو منتقل کرنا ، ایسی توقعات ہیں جو ہمیں ان برگزیدہ خواتین سے دائمی طور پر رہیں گی۔

 آٹھ نکاتی بین الاقوامی گوہر شاد ایوارڈ کے محور  
عالمی گوہر شاد ایوارڈ کے سکریٹری نے کہا کہ نیکوکاری، اہم کارنامے انجام دینا ایسی صفات اور کارنامے ہيں جن سے سب کو فائدہ پہنچتا ہے  اس عام المنفعت کام میں " ایثار و شہادت، استقامت و بیداری اسلامی، تعلیم وتعلّم، تحقیق، تہذیب و ثقافت، ہنر، ذرائع ابلاغ، وقف اور خیراتی اور فلاحی امور، معاشرتی امور، امور صحت عامہ اور مینیجمنٹ و صنعت تعمیرات جیسے شعبے سبھی شامل ہیں ۔

سکریٹیریٹ کو 120 مقامی اور غیرملکی مقالے وصول
انھوں نے یہ بھی بتایا کہ گزشتہ برسوں کی مانند اس سال بھی 60 مقالے مقامی ذرائع سے اور اتنی ہی تعداد میں غیر ملکی خواتین کے مقالے، سکریٹیریٹ کو موصول ہوئے ہیں ۔ پہلے مرحلے میں ہر ایک شعبے  سے بیس بیس مقالوں کا اانتخاب کیا جائے گا اور آخر میں اس تعداد میں سے امام ہشتم کی نیت سے ہم 8 مقالوں کا انتخاب کریں گے۔
سروری نے کہا کہ انتخاب کا مرحلہ، مذکورہ  8 محوروں کی بنیاد پر انجام دیا جاتا ہے اور اس سلسلے میں وسعت نظر سے کام لیا جاتا ہے اور کوئی بھی خواہ کسی مذہب یا دین سے تعلق رکھتا ہو اسے اس ایوارڈ کو حاصل کرنے کا حق ہوتا ہے۔  ہماری ساری تگ و دو انہی نکات پر قائم رہنے کے سلسلے میں ہیں اور ہماری یہ کوشش بھی ہوتی ہے کہ کارخیر کی تعریف صرف وقف کرنے کے سلسلے میں نہ ہو بلکہ اس ضمن میں گوناگوں دوسرے اچھے اقدامات کو بھی نظر میں رکھا جائے۔

انھوں نے کہا  کہ پچھلے تین بار کے ان پروگراموں ہم نے اب تک 24 ممتاز اور مخیّر خواتین کو ایوارڈ دئے ہیں اور ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا گياہے جن کا تعلق ایران، نائیجیریا، کینیا، عراق، ترکی، روس، کویت، بحرین، برطانیہ، تنزانیہ اور تھائی لینڈ سے ہے۔

سکریٹیریٹ کی سائٹ کا دنیا کی 6 زندہ زبانوں میں افتتاح  
عالمی گوہرشاد ایوارڈ کے سکریٹری سروری نے سکریٹیریٹ کی سائٹ کا اس سال کے ایوارڈ کی تقریب کے دوران افتتاح کا ذکر کیا اور کہا : فی الحال اس سائٹ  http://goharshad.aqr.ir کا 6 زبانوں فارسی، انگریزی، آذری، اردو، روسی اور عربی زبانوں میں افتتاح ہوچکا ہے۔ چنانچہ اب اس سکریٹیریٹ کو امور خیریہ اور وقف کے موضوعات پر مقالے اور تجاویز بھیجی جا سکتی ہیں۔ اب اس ذریعۂ ابلاغ کے توسط سے تمام افراد خصوصا" برگزیدہ افراد ، سکریٹیریٹ کے ساتھ اپنا  رابطہ برقرار کرسکتے ہیں۔ سکریٹیریٹ میں اب تمام ریکارڈ کو مختلف عنوان کے تحت محفوظ کرلیا جائے گا اور سبھی  برگزیدہ افراد دیگر افراد کو متعارف کرانے کا ذریعہ بھی بنیں گے اور یہاں تک کہ انہیں فیسٹیول میں جج کے طور پر بھی مدعوکیا جائے گا  
وزٹرز کی تعداد:35
 
آپ کی رائے

نظر شما
نام
پست الكترونيک
وب سایت
نظر
...